جنوبی کوریا میں بیلجیم کے سفیر اپنی اہلیہ کے جرم کی پاداش میں برطرف

جنوبی کوریا میں بیلجیم کے سفیر کی اہلیہ نے ملبوسات کی دکان میں نہ صرف سیلز گرل کو تھپڑ مارا بلکہ کپڑوں کی قیمت ادا کیے بغیر بوتیک سے چلی گئیں جس پر سفیر کو عہدے سے برطرف کردیا گیا۔

عالمی خبر رساں ادا رے کے مطابق بیلجیم نے تین سال سے جنوبی کوریا میں تعینات اپنے سفیر پیٹر لیکوے کو عہدے سے سبکدوش کر دیا۔ سفیر کو ان کی اہلیہ کی ایک حرکت کی وجہ سے شدید عوامی دباؤ کے بعد برطرف کیا گیا۔

بیلجیم کے سفیر کی اہلیہ پر جنوبی کوریا میں ملبوسات کی ایک دکان پر کام کرنے والی دو خواتین ورکز سے بدسلوکی اور تھپڑ مارنے کا الزام تھا۔ سفیر کی اہلیہ نے سیلز گرل سے نہ صرف جھگڑا کیا بلکہ انہوں نے کپڑوں کی قیمت بھی ادا نہیں کی تھی۔

یہ واقعہ 9 اپریل 2020ء کو ہوا، جس کی سی سی ٹی وی فوٹیجز وائرل ہوگئی تھیں۔ صارفین نے سفیر کی اہلیہ کی حرکت پر شدید تنقید کڑی کی تھی جس کے بعد سوشل میڈیا پر ملک کی بدنامی کا باعث بننے والی ویڈیو پر اعلیٰ حکام نے انکوائری کمیٹی تشکیل دی تھی۔

انکوائری کمیٹی کی تشکیل کے بعد بیلجیم کے سفیر پیٹر لیکوے نے اپنی اہلیہ کی جانب سے معذرت بھی کی تھی، تاہم وزارت خارجہ نے سفیر کو عہدے سے برطرف کردیا۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو