جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کیلئے رولز آف بزنس میں ترامیم کی منظوری

پنجاب کابینہ نے جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے قیام کے لیے رولز آف بزنس 2011ء میں ترامیم کی منظوری دے دی۔

لاہور میں وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدارکی زیر صدارت پنجاب کابینہ کا اجلاس ہوا جس میں جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ سمیت مختلف امور پر غور کیا گیا۔

کابینہ نے جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے لیے رولز آف بزنس 2011ء میں ترامیم کی منظوری دی جس کے تحت 16صوبائی محکموں کے سیکرٹریز جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ میں کام کریں گے۔

اجلاس میں پنجاب شوگر فیکٹریز کنٹرول ایکٹ 1950ء اور پنجاب گورنمنٹ ایڈور ٹائزمنٹ پالیسی 2020ء میں ترامیم کی بھی منظوری دی گئی۔

کابینہ اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کے تمام امور پیپر لیس ہوں گے۔

اجلاس کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے صوبائی وزیر اطلاعات فیاض چوہان کا کہنا تھا کہ جنوبی پنجاب کےعوام کومبارکبادپیش کرتاہوں،کچھ قانونی رکاوٹیں دورکیے بغیرجنوبی پنجاب صوبہ نہیں بن سکتا تھا۔

فیاض چوہان کا کہنا تھا کہ 16 سیکرٹریز جنوبی پنجاب میں بیٹھیں گے اور مکمل اختیارات کے ساتھ افسران فرائض انجام دیں گے، پہلے مرحلے میں 16 ڈیپارٹمنٹس کے دفاتر قائم کیےجائیں گے اور پھر اگلے 3 ماہ میں دیگر 16 ڈیپارٹمنٹس کے دفاتر بھی قائم کیے جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم پرانی روایت ختم کرنے جا رہے ہیں، بےضابطگیاں اور گھوسٹ ملازمین کا خاتمہ ہوگا، وقت سے پہلے جنوبی پنجاب کے قانونی مراحل کو طے کیا گیا ہے، تمام سیاسی جماعتوں کو آن بورڈ لے کر قومی اسمبلی میں جنوبی پنجاب صوبے کا بل پاس کروائیں گے۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو