ایم پی اے کے شوہر کی جانب سے تشدد پر جج نے ایف آئی آر کیلئے عدالت سے رجوع کرلیا

اسلام آباد کے ریڈ زون میں پاکستان تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی عابدہ راجہ کے شوہر سے ہونے والے جھگڑے پر ایڈیشنل سیشن جج نے مقدمے کے اندراج کے لیے عدالت سے رجوع کرلیا۔

ایڈیشنل سیشن جج جہانگیر اعوان نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا ہے کہ پولیس نہ تو ایف آئی آر کا اندراج کر رہی ہے اور نہ ہی معاملے کی تفتیش کر رہی ہے، پولیس کو مقدمہ درج کرنے کےاحکامات جاری کیے جائيں۔

جہانگیر اعوان کے مطابق انہیں ہراساں کیا جارہا ہے، وہ گاڑی میں پیٹرول بھروا رہے تھے کہ دو افراد نے انہیں مارنا شروع کردیا، تشدد سے ان کے سر، منہ، آنکھیں، ناک، ہونٹ اور پاؤں میں چوٹیں آئی ہیں۔

درخواست میں کہا گیا ہے کہ اپنی جان بچانے کے لیے انہوں نے فائر کیا، جس پرحملہ آور بھاگ گئے۔

دوسری جانب زخمی جج کی میڈيکو لیگل رپورٹ بھی تیار ہوگئی ہے جس میں تشدد ،بائيں پیر کی چھوٹی انگلی میں فریکچر، بائيں آنکھ کے اوپر خراش، ناک پر زخم اور چہرے پر خراشوں کی تصدیق ہوئی ہے۔

خیال رہے کہ گذشتہ روز اسلام آباد کے ریڈ زون میں دفتر خارجہ کے سامنے واقع پیٹرول پمپ پر جوڈیشل آفیسر اور پاکستان تحریک انصاف کی رکن پنجاب اسمبلی عابدہ راجہ کے شوہر میں جھگڑا ہوا تھا۔

واقعے کی سی سی ٹی وی فوٹیج بھی سامنے آگئی ہے جس میں ایم پی اے کے شوہر کو گاڑی میں موجود افراد کو تھپڑ اور مکے مارتے دیکھا جاسکتا ہے۔

اس حوالے سے ایم پی اے عابدہ راجہ کا تھانہ سیکرٹریٹ کے باہر میڈیا سے گفتگو میں کہنا تھا کہ ہماری گاڑی پیٹرول پمپ پر کھڑی تھی کسی نے فائرنگ کر دی، گاڑی میں میرے خاوند سوار تھے، فائرنگ کرنے والے کو پولیس نے پکڑ لیا ہے جب کہ جائے وقوع سے پستول کی گولیوں کے خول بھی ملے ہیں۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو