آذربائیجان اور آرمینیا کی جنگ؛ آذری سفیر کا پاکستان کے حوالے سے بیان

آرمینیا سے جنگ میں آذربائیجان کی مکمل حمایت کرنے پر پاکستان میں آذری سفیر علی علی زادہ نے اظہار تشکر کیا ہے۔

آذربائیجان اور آرمینیا کے درمیان ’نگورنو کارا باخ‘ کے تنازع پر کئی روز سے جنگ جاری ہے اور آذری فوج نے اپنے کئی اہم علاقے آرمینیا کے قبضے سے چھڑا کر وہاں دفاعی پوزیشن مضبوط کرلی ہے۔

آرمینیا سے جنگ کے معاملے پر پاکستان اور ترکی نے برادر اسلامی ملک آذربائیجان کی کھل کر مکمل حمایت کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ پاکستان آذری بھائیوں کے ساتھ کھڑا ہے۔

اس حمایت پر اب پاکستان میں آذربائیجان کے سفیر علی علی زادہ بھی بول اٹھے ہیں اور انہوں نے اپنی ٹوئٹ میں پاکستانی قوم سے اظہار تشکر کیا ہے۔

سینیٹر مشاہد حسین کی ٹوئٹ کے جواب میں علی علی زادہ کا کہنا تھا کہ پاکستانی قوم، پارلیمنٹ، حکومت اور فوج نے ہمیشہ آذربائیجان کے مؤقف کی حمایت کی ہے اور وہ اس پر شکر گزار ہیں۔

انہوں نے ٹوئٹ میں لکھا کہ ’آذر، پاک دوستی زندہ باد‘۔

خیال رہے کہ عالمی سطح پر ’نگورنو کارا باخ‘ آذربائیجان کا تسلیم شدہ علاقہ ہے تاہم اس پر آرمینیا کے قبائلی گروہ نے فوج کے ذریعے قبضہ کررکھا ہے جب کہ اسی قبضے کے باعث پاکستان آرمینیا کو تسلیم نہ کرنے والا واحد ملک ہے۔

واضح رہے کہ ترجمان دفتر خارجہ زاہد حفیظ کا کہنا تھا کہ پاکستان نگورونو کاراباخ سے متعلق آذربائیجان کے مؤقف کی حمایت کرتا ہے، نگورونو کاراباخ پر آذربائیجان کا مؤقف اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی متفقہ قراردادوں کے مطابق ہے۔

ترجمان مزید کہا کہ خطے میں امن وسلامتی کو لاحق خطرات سے بچنے کے لیے آرمینیا کو کارروائی روکنا ہوگی۔

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

شاید آپ یہ بھی پسند کریں

مینو